پاپی گھر new urdu sex story

Share


پاپی گھر – پارٹ 1 وشال آپنی موٹرسائکل پر تیجی سےآپنےگھر کی طرف آ رہا تھا . جب سےاُسنےکالیج میں پرنسپل اَنج سر طرف پنکی میڈم کی چدائی دیکھی تھی تب سےاُس کا لوڈا ٹائٹ ھو گیا تھا . مدارچوڑ اُسکی گرلپھرینڈ شلپا بھی تو نہی آئی تھی , ورنا اُسکی چوت مار لیتا . گھر پر آتےھی پھٹاپھٹ مین گیٹ کھول کر بڑا اندر آیا طرف سوپھےپر بیٹھ گیا . سامنےاُسکی مممی سوتا بیٹھ تھی . “مممی آج بہت گرمی ہے , ئیسی کی کولنگ بھی کم لگ رہی ہے” . بڑا کو دیکھ کر اُسکی مممی رونےلگی . “کیا ہوا مممی?” بڑا نےپوچھا . “تیرےپاپا آج بھی اُس کام والی دیپا کی گاڑ مار رہےہے , میری تو کوئی پھکر ھی نہی ہے . صبح سےمیری چوت پیاسی ہے . ” مممی نےروتےہوئے کہا , اور بڑا کےپاس آ کےبیٹھ مندرجہ ذیل . سوتا نےبڑا کےلوڈ‍ےکو جینس کےاُپر سےسہلانا شروع کر دیا . “مےابھی پاپا طرف دیپا کو بتاتا ھو . کتنی بار پاپا کو کہا ہے پہلےگھر کی چوت پھر باہر کی . ” بڑا غصے سےبول رہا تھا . وشال نےآپنی جینس کھول دی اور ننگا ھو گیا . “کیا بات ہے آج تیرا لوڈ‍ا بہت سکت ہے . ” مممی نےپوچھا . “کیا بتااو مممی آج کالیج میں پرنسپل طرف میڈم کی چدائی دیکھ لی . تب سےمیرا لاڈا کھڑا ہے . ” بڑا نےبھی مممی کا بلااُس کھول دیا . سوتا کی 48 سائج کےپپیتےلٹک گئے . بڑا نےآپنی مممی کےنپل چوسنےچالو کر دئی . “بس تو ھی میرا ساچا بیٹا ہے , تو ھی اپنی مممی کا دھیان رکھتا ہے . اگر تو نا ھوتا تو میری چوت پیاسی رہتی . ” بڑا نےآپنی مممی کو سوپھےپر لیٹا دیا اور اُس کی ٹانگےکھول دی . “مممی مجھےبہت پیاس لگی ہے . جلدی سےموت , میرا گلا سکھ رہا ہے . ” , اتنا کہ کر بڑا نےآپنا موہ مممی کی چوت پر لگا دیا . “تو میرا کتنا دھیان رکھتا ہے” اور مممی متنےلگی . بڑا آئسےمممی کی چوت پر موہ لگا کر بیتا تھا کی ایک بوند بھی ویسٹ نا ھو . پورا موت ختم ھونےکےبات بڑا چوت کو چاٹنےلگا . آپنی پوری جب چوت میں گھسا دی . “بس بیٹا بس , اُاُو : اُاُہا بہت مزا آ رہا ہے . اس طرح بس اسی طرح . تھوڈا اور اندر , تھوڈا اور اندر , ھا اسی طرح . اُاُو : اُاُہا اُواُاُ . ” مممی ایسی مچل رہی تھی جیسےسالو سےنا چدھی نا ھو .


مممی ایسی مچل رہی تھی جیسےسالو سےنا چدھی نا ھو . بڑا اپنی مممی سوتا کی چوت ایسی چاٹ رہا تھا جیسےکتا پانی پیتا ہے . “بس بیٹا بس اُواُاُ اُہاآ آآہا بس مزا آ گیا . بلکل اپنے ماما پر گیا ہے . مےجھڑنےوالی ھو . آہا ھہا اُاُہا مزا آ رہا ہے” . 5 منٹ کی چٹائی کےبعد سوتا جھڑ گئی . بڑا نےسارا رس چاٹ چاٹ کر پی لیا . “مممی تیرا رس پئی بگیر من نہی بھرتا , کیا کرو . ” “کوئی بات نہی بیٹا مینےتجھےکبھی مانا کرا ہے , کبھی بھی کیسےبھی تو میرا رس پی سکتا ہے . چل اب میری باری . ”اتنا کہ کر مممی نےبڑا کا لؤدا مہ میں بھر لیا . سوتا چسائی میں بہت ئیکسپرٹ تھی . اپنے بوڈھےسسر کا لنڈ بھی چوس چوس کر جوان بنا دتی تھی . (اَسل میں سوتا کو اسی وجہ سےپسند کرا تھا . ڈیٹیل آگے کےپارٹس میں ہے) . “مممی مجھےبیٹھنےتو دے . تجھےتو بس چوسنےکی پڑی ہے . رک ابھی . ” یہ کہ کر بڑا نےاپنی مممی کو دور کرا . دراَسل بڑا سیدھا چدائی کرنا چاہتا تھا . “مممی صبح سبہ چسائی کرا کرو , ابھی صرف چدائی . ”اتنا کہا کر بڑا نےاپنی مممی کو پھر سےسوپھےپر پٹکھ دیا اور اپنی مممی کی ٹانگےکھول دی . “نہی بیٹا تجھےبس اپنی پڑی ہے , پہلےمجھےچوسنےدے پھر چود لینا . ” سوتا نےاپنی ٹانگےبند کر لی . “مممی تو چوس چوس کر میرا مال موہ میں نکل لیگی . ” بڑا نےکہا . وشال نےجبردستی اپنی مممی کی ٹانگےکھول دی اور سوپھےپر ٹانگو کےدرمیان میں بیٹھ گیا . بڑا اپنے پھنپھناتےہوا لوڈےپر تھوک لگانےلگا . اُدھر سوتا سوپھےسےاُٹھنےکی کوشش کرنےلگی . (آج سوتا کا موڈ اپنا ریپ کرانےکا تھا . وہ ایک جبردست چدائی چاہتی تھی) . سوتا سوپھےسےاُٹھ کر کچن جانےلگی . “مممی کہا جا رہی ھو” بڑا چللیا . “کچن میں , کھانا بنا ہے , چدائی بعد میں کریگی” . سوتا جلدی پانیدی جانےلگی اور اپنے چوتڑ مٹکا مٹکا کر چلنےلگی . اُسکےچوتڑ دیکھ کر بوڑہےکا مان بھی للچا جائی . بڑا سےرہا نہی جا رہا تھا . “تجھےدکھتا نہی میرا لؤدا کتنا ٹائٹ کھڑا ہے” . پر سوتا نےکےنا سنی طرف وہ کچن میں چائی بنانےلگی .

Share
Article By :

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *