سوامی جی نےمجھےپاکیزہ کیا – swami sex urdu sex story

Share

[img:1mx3diz8]http://4.bp.blogspot.com/-Q4IBopSZvd8/VCVw8HMVMGI/AAAAAAAAAN0/fNJuzN76b5A/s1600/original_33052452-1.jpg[/img:1mx3diz8]

[size=150:1mx3diz8]پریشک : ساکشی … ہےللو دوستوں , میرا نام ساکشی ہے اور میں ایک 39 سال کی ایک شادیشدا عورت ھوں , میری پھیملی میں میرےشوہر اَرن , کیشو , سیپانی , اور شینا ہے اور ھماری شادی ھمارےگھر والو کی مرجی سےہوئی تھی। ھماری شادی کو 19 سال ہوئے تھےاور اسی درمیان ھماری دو بیٹیاںہوئی , بڑی کا نام ہم نے بڑےپیار سےسیپانی اور چھوٹی کا نام شینا رکھا। میرےشوہر اچھے دکھنےوالےایک مدھیمورگیےخاندان کےہے اور وہ اُس وقت ایک پرائویٹ کمپنی میں نوکری کرتےتھے , لیکن کچھ وقت بعد اُنکی نوکری چلی گئی। پھر ھم اُس وقت اَچانک کام کی تلاش میں بھوپال شپھٹ ہوئے تھے , لیکن میرےشوہر کو کوئی کام نہیںمل رہا تھا اور وہ کئی دفترو میںانٹرویو دنےگئے , لیکن پھر بھی اُنہیںنوکری نہیںمل پا رہی تھی اور اسی باعث ھمارےگھر میں آئی دن جھگڑےھونےشروع ھو گیہ। اب گھر تو پیسو سےھی چلتا ہے اور ایک عام آدمی کی ضرورت کبھی ختم نہیںھوتی اور کم پیسےھونےکی وجہ سےھم بہت ٹائیم ٹینشن میں ھی رہتےتھی। پھر ایک دن مجھےمارکیٹ جاتےوقت ایک وجناپن دکھا , وہ کسی بابا کےنام سےتھا , جسےلوگوںنےبہت بڑا درجا دیا ہوا ہے اور سبھی لوگ کہتےتھےکہ وہ من کی امن عطا کرتےہے اور پوجا کرکےھر ایک سمسیااو کا نوارن نکالتےہے। پھر میںنے گھر پر جاکر اپنے شوہر سےیہ بات کی , لیکن میرےشوہران سب باتوںمیں بلکل بھی یقین نہیںکرتےتھےتو اُنہوں نے مجھسےکہا کہ تمہےاگر جانا ہے تو جاؤ , لیکن مجھیان سبکےلئے مت کہنا। پھر میںنے بھی سوچا کہ میں اُنہےزیادہ کیوںکہوں؟ اور ویسےبھی اُنہوں نے مجھےجانےکی اجازت دے ھی دی تھی , لیکن میںنے ایک دو بار اور سوچا کہ کیا کروں؟ کیونکہ میرےگھر کی حالت بہت بگڑ مندرجہ ذیل تھی। پھر میںنے مجبورن سوامیجی سےرابطہ کرنےکی ٹھانی اور سوچا کہ ھو سکتا ہے اُنکےپاس ھماری پریشانی کا کوئی طریقہ ھو। پھر اگلے دن میں نہاکر اچھی سی ساڑی پہنکر سوامی کےخانقاہ میں مندرجہذیل। سوامی جی دکھنےمیں 56 – 60 کی عمر کےلگ رہےتھےاور اُنکےآس پاس بھکت جن بیٹھےہوئے تھےاور اُنکےدونوںباجو میں دو لڑکیاںقریب 30 کی عمر کی سپھید ساڑی میں کھڑی ہوئی تھی। سوامیجی بھگوان اور امن کی باتےکر رہےتھی। پھر ستسنگ کھتم ھونےکےبعد سب لوگ ایک ایک کرکےسوامیجی سےملنےجانےلگےاور جب میں اُنکےپاس پہنچی تو وہ مسکرائی اور مجھےآشیرواد دیا اور کہا کہ بیٹی تمہارےماتھےکی لکیر دیکھ کر لگتا ہے کہ تم اس وقت گھور کشٹ سےگجر رہی ھو , بتااو کیا کشٹ ہے ؟ سوامیجی تیرا ھر کشٹ دور کر دینگے , کلیان ھو بیٹی تیرا سارا کشٹ دور ھو جائیگا। پھر سوامیجی سےملنےکےبعد اُنہوں نے مجھےانتظار کرنےکو کہا اور میں سائیڈ میں جاکر انتظار کر رہی تھی اور سبکےجانےکےبعد سوامیجی نےمجھےبلاوا بھیجا , میں اُنکےپاس چلی مندرجہذیل। سوامیجی کےساتھ اُنکی دو سیوکا بھی تھی , جنہونےسپھید ساڑی پہن رکھی تھی اور ایک ششےبھی تھا , جس نے دھوتی پہنی ہوئی تھا। پھر سوامیجی نےمجھےاپنے سامنےبٹھایا اور پوجا کرنےلگے , وہ کچھ منتر کا جاپ کر رہےتھےاور اُنکی سیوکا پیچھےدیپک مسئلہ کھڑی تھی। سوامیجی کی آنکھےبند تھی اور وہ اپنے ھونٹھ ھلاتےجا رہےتھے , جیسےکہ من میں کوئی منتر کا جاپ کر رہےھو। پھر سوامیجی نےآنکھےکھولی اور پھر اُنہوں نے مجھےگمبھیرتا سےدیکھ کر کہا کہ جسکا ڈر تھا , وہی ہوا। بیٹی تمہاری جنم میگزین میں الزام ہے , جسکی وجہ سےتمہارےخاندان کےپھیلاؤ میں اَرچن آ رہی ہے اور اب اسکی لئے یجن کروانا ھوگا اور پانید ھیاسکا خوشامد کرنا پڑے گا اور پوجا کروانی ھوگی। پھر سوامیجی کی بات سنکر میں تھوڑا گھبرا مندرجہ ذیل اور میںنے سوامیجی سےکہا کہ سوامیجیاسکا کوئی طریقہ بتائئی ؟ میں کوئی بھی پوجا کرنےکےلئے تیار ھون। پھر سوامیجی نےکہا کہ کل تم سوچچھ ھوکر نئے وستر ڈال کر بنا سندور لگائی اور منگلسوتر پہنےقریب 12:30 بجے خانقاہ میں آ جانا , ھم کل سےپوجا شروع کر دینگے , لیکن دھیان رہےکہ کسی کو بھی اس پوجن کےبارےمیں مت بتانا , ورنا وگھن پڑ جائیگا। پھر میں وہاںسےنکلکر سیدھےاپنے گھر آ مندرجہ ذیل , لیکن یہ سوچکر کہ میری کنڈلی میں الزام ہے اور میری وجہ سےگھر میں پریشانیاںھو رہی ہے , میں پوری رات سو نہیںپا رہی تھی اور میں اپنے آپکو کوستی جا رہی تھی کہ میری وجہ سےمیرےخاندان پر مسیبت اور شوہر پر اَرچن آ رہی ہے। پھر میںنے ٹھان لیا کہ اگر میری وجہ سےکوئی بھی مسیبت آئی ہے تو میں ھی اسےٹھیک کرنگی। پھر اَگلی صبح میں اپنے شوہر کو ناشتا کرواکر اپنے بچو کو سکول چھوڑنےکےبعد واپس گھر آئی اور تب تک میرےشوہر بھی ناشتا کرکےدفتر کےلئے نکل چکےتھی। پھر میںنے گھر کا سارا کام ختم کیا اور پھر میں نہانےچلی مندرجہ ذیل , میں اچھی طرح سےنہاکر ایک پیلےرنگ کی ساڑی میں تیار ہوئی। پھر میں بنا سندور لگائی اور بنا منگلسوتر کےسوامیجی کےخانقاہ میں چلی مندرجہذیل। وہاںمیںنے دکھا کہ آج خانقاہ میں کوئی بھی نہیںتھا , میں وہاںپر پہنچی تو گرجی کی سیوکااوںنےمجھےاندر کا راستہ دکھایا اور وہ خود مجھےاندر کمرےمیں مسئلہ گئی , وہاںپر اندر ایک بیڈ تھا اور اُس بیڈ کےسامنےوالی خالی جگہ میں سوامیجی نےایک یجن کی ویدی کو بنایا تھا। پھر میںنے سوچا کہ شاید سوامیجی یجن بھی کرتےھونگےاور پھر رات میں یہیںپر سوتےھونگے؟ تو میری سوچ کو روکتےہوئے اُنکی ایک ششیا بولی کہ تم بلکل صیح جگہ پر آئی ھو। سوامیجی تمہاری ھر خواہش پوری کر دینگے اور اُنکےپاس بہت بڑی طاقت ہے , ابھی تم اُنکےساتھ پوجن میں بیٹھو اور ھم لوگ باہر جاتےہے , تمنےکسی کو بتایا تو نہیںکہ تم یہاںپر آئی ھو ؟ تو میںنے نا میں سر ھلایا اور پھر سوامیجی نےمجھےبیٹھنےکےلئے کہا , ھم وہیںپھرش پر بیٹھ گئے اور سوامیجی منتر بولکر آگ میں گھی ڈال رہےتھےاور وہ منتروںکا اُچارن کرتےجا رہےتھی। پھر کچھ دیر بعد ایک سیوکا باہر سےدودھ کا گلاس مسئلہ آئی , بابا نےتھوڑا دودھ آگ میں ڈالا اور پھر دودھ کو ھاتھ سےپکڑکر کچھ منتر بولا اور پھر وہ دودھ مجھےپینےکو کہا اور بولےکہ اسےپی جاؤ , اس سے تمہاری روح پاکیزہ ھوگی। پھر مجھےڈر لگا , لیکن میںنے ڈرتےڈرتےدودھ ھاتھ میں لےلیا اور میںنے دودھ ایک ھی گھونٹ میں پورا دودھ پی لیا اور دودھ پینےکےبعد مجھےکچھ عجیب سا لگنےلگا। پھر اَچانک ھی مجھےنشا سا چڑنےلگا اور میری آنکھو کےآگے اندھیرا چھانےلگا اور میں بیہوش سی ھونےلگی اور میں پھرش پر ھی گر پڑی। پھر مجھےھوش تو تھا کہ کیا کیا ھو رہا ہے , لیکن میں اُسکا مخالفت نہیںکر پا رہی تھی اور مجھےمحسوس ہوا کہ کچھ شخص ملکر مجھےاُٹھا رہےہے اور پھر اُنہوں نے مجھےپلنگ پر لیٹا دیا اور میں آنکھیںکھولکر سب دیکھ رہی تھی , لیکن میں کچھ کر نہیںپا رہی تھی। پھر اُس سوامی نےاپنے ششیو کو باہر انتظار کرنےکےلئے کہا। سوامیجی نےجاکر کمرےکا درواجا بند کر دئی اور اندر سےکنڈی لگا دی اور پھر سوامیجی میرےپاس آئی اور اُنہوں نے میری ساڑی کا پللو کھینچکر ھٹا دیا , وہ میرےسینےپر ھاتھ پھیر رہےتھےاور کچھ منتر بولتےجا رہےتھی। پھر اُنہوں نے میری ساڑی کو میرےبدن سےالگ کر دیا اور اب وہ میرےسینےاور پیٹ دونوںجگہ ھاتھ پھیرتےجا رہےتھے , جسکی وجہ سےمجھےاُتتیجنا ھو رہی تھی। پھر میرےبدن میں ایک عجیب سی سہرن ھونےلگی اور میرےپیٹ پر ھاتھ پھیرتے- پھیرتےوہ میری نابھ میں اپنی اُنگلی بار – بار گھسا رہےتھی। پھر وہ اُوپر آئی اور ایک – ایک کرکےمیرےبلااُج کا ھک کھولنےلگےاور میری آنکھےاپنے آپ بند ھونےلگی। پھر اُسکےبعد وہ مجھسےلپٹ گئے اور اپنا ھاتھ پیچھےلےجاکر میری برا کا ھک پیچھےسےکھول دیا اور اُنہوں نے میرےبلااُج اور میری برا کو نکال کر مجھسےالگ کر دیا। پھر میں شرم سےمری جا رہی تھی , لیکن میں اُس نشیلےدودھ کی وجہ سےبلکل بیبس تھی اور میں کمر سےاُوپر بلکل ننگی ھو مندرجہ ذیل تھی। پھر اُنہوں نے ھاتھ میں کوئی سگندھت تیل لیا اور وہ میرےسینےپر ملنےلگی। میری دھڑکن بہت تیزی سےچل رہی تھی اور میری سانسےاُوپر نیچےھو رہی تھی اور میرےبدن سےاُس سگندھت تیل کی وجہ سےایک مست خوشبو آنےلگی। سوامیجی میرےپاس میں بیٹھ گئے اور میرےبوبس کو دبانےلگےاور میرےنپپل کو سہلانےاور دبانےلگے , وہ میری بگڑتی حالت کو دیکھ رہےتھےاور سمجھ رہےتھی। پھر مجھےنشےمیں اُنکی یہ ھرکت اچھی لگنےلگی اور میرےبدن میں ایک عجیب سی ھلچل ھونےلگی। وہ میرےبوبس کو بار – بار دبا رہےتھےاور میرےایک – ایک نپپل سےباری – باری سےکھیل رہےتھی। پھر وہ اور قریب آئی اور میرےبوبس کو اپنے مہںمیں مسئلہ چوسنےلگےتھےاور سوامیجی میرےبوبس کو چوستےچوستےاُسےدرمیان – درمیان میں کاٹ بھی رہےتھےاور بوبس چوستےھیہ وہ میری نابھ میں بھی اُنگلی گھساتےجا رہےتھےاور مجھےاُنکی ساری ھرکتےبہت اچھی لگ رہی تھی , مجھےایسا لگ رہا تھا کہ مانو بہت دن بعد کوئی میری نپپل کو چوس رہا ھو। اَرن نےکئی دن سےمجھےچھآ بھی نہیںتھا , کیونکہ وہ اپنی پریشانیوںمیں ھی گھرا رہتا تھا اور مجھےآج پتہ لگ رہا تھا کہ میرےبدن میں آج بھی قابل دید ہے , یعنی میں آج بھی کسی کو پاگل بنا سکتی ھون। سوامیجی بولتےجا رہےتھے , تم ئیکدم سکون ھوکر اس پوجا کا فرحت لو , میں تمہاری سب پریشانی دور کر دونگا , تمہارےبدن کو ئیکدم پاکیزہ کرنا پڑیگا। پھر سوامیجی نےمیری گردن پر ھونٹھ لگا دئی اور چومنےلگی। پھر ایک بوبس کو چومنا شروع کیا اور میرےدوسرےبوبس کو دباتےجا رہےتھےاور وہ ساتھ ساتھ کچھ منتر بھی بولتےجا رہےتھے , وہ بہت مادک ماحول تھا। اُس کمرےمیں ایک دیپک پانی رہا تھا اور آگ ویدی سےنکلنےوالی روشنی سےکمرا نہا رہا تھا اور پورا کمرا سگندھت تھا اور میرےاُوپر سوامیجی ننگےبدن میں جھکےہوئے تھے , میرےبھی بوبس ننگےتھی। پھر اُنہوں نے میرےھونٹھو پر اپنے ھونٹھ رکھےاور میرےھونٹھو کو چوسنا شروع کیا , میرےھونٹھ چوستےھیہ اُنہوں نے اپنی جیبھ کو میرےمہںمیں گھسا دیا اور اُنکی جیبھ میں ایک عجیب سا سواد تھا اور وہ میری جیبھ کو چوسنےلگی। مجھےمحسوس ھو رہا تھا کہ وہ میرےمہںکےاندر چاٹ رہےہے। پھر وہ اُٹھکر میرےچہرہ کو دیکھنے لگےکہ کہیںمیں پریشان تو نہیںلگ رہی , لیکن اُنہےمیرےچہرہ سےایک خوشی کی جھلک ملی। پھر سوامیجی بولےکیوںکیسا لگ رہا ہے بیٹی ؟ تمہارےدل میں جو بھی پریشانی ہے دل سےنکال دو , میں دل پر منترو سےخوشامد کر رہا ھوںاور پھر وہ زور جور سےمنتر اُچارن کرنےلگےاور باہر بیٹھےہوئے اُنکےششےبھی زور جور سےمنتروچارن کرنےلگی। پھر مجھےلگا کہ میں کسی سورگ میں ھوںاور اب میری چدائی ھونےوالی ہے اور مجھےلگا کہ اب سوامیجی مجھےچودکر ھی چھوڑینگےاور شاید اُنکےششےبھی میری اس نشےکی حالت کا فائدہ اُٹھائیںگےاور اگر میں مخالفت کرتی ھوںتو یہ مجھےمار ڈالینگےاور کسی کو کچھ پتہ بھی نہیںچلیگا। پھر میں وہاںسےحصہنا چاہتی تھی , لیکن نشےکی وجہ سےمیں کچھ نہیںکر پا رہی تھی , بس چپ چاپ لیٹکر اُنکی کریا کا فرحت لےرہی تھی। پھر سوامیجی بولےکہ اب تمہارا منھپوتر ھو گیا ہے اور اب باقی جسم کو بھی پاکیزہ کرنا ہے اور اب میں نیچےکی کرونگا , تم میرا ساتھ دتی رہو। پھر تم بلکل اُلجھن نجات جیون جی سکتی ھو। میں نشےمیں تھی اور ھل بھی نہیںپا رہی تھی , وہ دوبارہ تیل مسئلہ میری نابھ میں ملنےلگےاور سوامیجی میرےپورےبدن میں ھاتھ پھیر رہےتھےاور تیل کی مالش بھی کر رہےتھی। وہ میرےھاتھوںکو چومتےچومتےنیچےکی طرف آنےلگےاور پھر میرےبوبس کےدرمیان میں اُنہوں نے چاٹنا , چومنا شروع کیا اور کس کرتےکرتےوہ میرےپیٹ کی طرف بڑی। پھر اُنہوں نے میرےپیٹ پر چومنا شروع کیا اور پاس پڑےکٹوری سےتھوڑا شہد نکال کر میری نابھ میں ڈال دیا اور پھر اُنکا مہںمیری نابھ پر آیا। پھر وہ میری نابھ کو چوسنےلگے , وہ میری نابھ کےاندر اپنی جیبھ گھساکر اندر چاٹنےلگےاوراتنےمیں میری چوت میں بھی ھلچل مچنےلگی , تیل کی سگندھ اور دودھ میں ملا نشا مجھےمدہوش کر رہا تھا اور اب میں خود چدوانےکو اُتسک ھو رہی تھی , میری آنکھےرہ رہکر بند ھو رہی تھی। پھر سوامیجی بولےکہ شاباش بیٹی , تم بہت اچھے سےپوجن میں حصہ لےرہی ھو। میں اسی طرح تمہارےپورےبدن کو پاکیزہ کرونگا اور وہ میری نابھ کو چاٹتےچاٹتےمیرےپیٹکوٹ کا ناڑا کھولنےلگے , اُسےکھولنےکےبعد اُنہےمیری گلابی کلر کی پینٹی دکھی। پھر اُنہوں نے میرا پیٹیکوٹ اور میری پینٹی کھینچکر اُتار پھینکی اور زور جور سےمنترواُچارن کرنےلگی। پھر میں اب بلکل ننگی اُنکےسامنےلیٹی ہوئی تھی اور وہ لگاتار میری صاف چوت کو دیکھ رہےتھےاور منتر بول رہےتھےاور پھر اپنا ھاتھ میری ننگی چوت پر پھیرنےلگےاور وہ بولےکہ اب وقت آ گیا ہے کہ میں تمہارےاندر کی گندگی کو صاف کروںاور میں اندر اس پاکیزہ تیل کی مالش کرتا ھوں , تم دل سےاُوپر والےکو یاد کرو , تمہےپتہ ہے کہ یون دوی پاروتی کا روپ ہے اور اب اپنی دونوںٹانگےکھولو پتری। پھر اُنہوں نے میرےپیر پکڑکر پھیلا دیا اور میرےپیروںکےدرمیان میں آکر بیٹھ گئے اور وہ میری چوت پر اپنا ھاتھ گھوما رہےتھےاور کچھ بڑبڑاتےجا رہےتھی। پھر ھاتھ میں تیل مسئلہ چوت کےاُوپر لگایا اور مالش کرنےلگی। چوت کےھونٹھ اُنکےچھونےسےکانپ رہےتھے , مانو ان میں بھی جان آ گئی ھو। وہ اُنگلی سےچوت کےھونٹھ پر مالش کئی جا رہےتھےاور پھر مجھےمحسوس ہوا کہ وہ میری چوت میں اپنی اُنگلی گھسا رہےتھےاور اُنہوں نے اپنی اُنگلی میری چوت کےاندر باہر کرنا شروع کر دیا تھا اور وہ میرےچوت کےدانےکو چھیڑنےلگ گئے اور پھر دوبارہ شہد مسئلہ چوت پر اُڑیل دیا। شہد اور تیل ملکر کیامت ڈھا رہےتھی। وہ پھر نیچےجھکےاور اُنہوں نے اُنگلیوںسےمیری چوت کی پلکےپھیلا دی اور چھید پر کس کرنا شروع کر دیا اور درمیان بیچ میں وہ اپنی جیبھ میری چوت کےاندر بھی ڈال رہےتھےاور پھر وہ اُسےمیری چوت کےبہت اندر تک گھما کر رہےتھےاور میری چوت سےگیلاپن نکلنےلگا। شہد اور چوت کا رس دونوںسوامیجی مجےسےچاٹ رہےتھی। پھر سوامیجی بولےکہ بہت سوادشٹ ہے بیٹی تمہاری یون کا رس جی کرتا ہے کہ ہمیشہ پیتا رہوں , لیکن پہلےتیری مشکل کا ھل ڈھونڈھنا ہے بچا। پھر مجھےایسے خواہش ھو رہی تھی کہ جیسےوہ میری چوت چوستےرہےاور ھٹےنہین। پھر اُنہوں نے اپنی تیل سےبھیگی ہوئی اُنگلی کو میری گانڈ میں گھسیڑ دیا اور ایک ھی جھٹکےمیں اُنکی درمیان والی اُنگلی میری گانڈ میں سما مندرجہ ذیل اور وہ میری چوت کو چوس رہےتھےاور ساتھ ھی ساتھ گانڈ میں اُنگلی بھی کر رہےتھےاور مجھ پر وہ دوہرا وار ھو رہا تھا। واسنا سےمیںنے آنکھےبند کر رکھی تھی اور اب میری چوت پانی چھوڑنےوالی تھی , میں اُنہےھٹانا چاہتی تھی , لیکن مجھمیںاتنی طاقت نہیںتھی کہ میں ایسا کر سکوںاور میں تو آنکھیںبند کرکےاُنکی چوت چوسنےکا مزا لےرہی تھی। پھر اُنہوں نے میری چوت کو بہت دیر تک چوسا اور اب وہ گھڑی آ ھی مندرجہ ذیل , جسکا مجھےانتظار تھا। پھر میںنے سوامیجی کےمہںپر بہت زور سےپانی چھوڑا تو مجھےشرم بھی آنےلگی , لیکن سوامیجی پورےمجےسےمیری چوت کا پانی پینےلگےاور میں اُنکےمہںمیں ھی جھڑ گئی। پھر سوامیجی نےمیری چوت کےپانی کو پورا پی لیا , وہ اُٹھےاور میرےاُوپر لیٹ گئے اور اُنکےھونٹھ میرےھونٹھ پر تھےاور میں خود اُنکےھونٹھ کو چوسنےلگی اور اُنکےمہںسےمجھےاپنی چوت کےپانی کا سواد ملنےلگا। دوستوںیہ کہانی آپ کامکتا ڈاٹ کام پر پڑ رہےہے। سوامیجی پھر سےبولےکہ بہت سوادشٹ تھا تیری یون رس , تم کیا کھاتی ھو کہ تمہاری چوتاتنی میٹھی ہے ؟ تیرا شوہر کتنا کسمت والا ھوگا جو روجاسکا رسسوادن کرتا ھوگا ؟ سوامیجی کو کیا معلوم کہ اَرن کبھی میری چوت نہیںچوستا , کیونکہ وہ چوت کو بہت گندا مانتا ہے اور چوسنا تو دور کی بات ہے , وہ کبھی چوت پر کس بھی نہیںکرتا ہے , لیکن آج سوامیجی نےمجھےجننت دکھا دی। پھر اُنہوں نے اپنے ھاتھ سےاپنے لنڈ کو میری چوت پر سیٹ کیا اور پھر زور سےایک دھکا لگایا اور سوامیجی کا موٹا لنڈ ایک ھی بار میں میری چوت میں پورا کا پورا گھس گیا। مجھےیاد نہیںکہ اُنکےلنڈ کا سائیج کیا ہے ؟ سوامیجی پھر سےمنتر بولنےلگےاور بوبس چوسنےلگی। میں نیچےسےدھککےمارنےکےلئیےاُنکواشارا کرنےلگی। پھر سوامیجی نےمیری چوت کو چودنا شروع کر دیا اور وہ زور جور سےاپنے موٹےلنڈ کو میری چوت کےاندر باہر کر رہےتھےاور سوامیجی میری چوت کی چدائی کرتےکرتےمیرےھونٹھو کو چوم رہےتھےاور ساتھ ساتھ میرےبوبس کو بھی دباتےجا رہےتھےاور میری نپپل کو اپنی اُنگلیوںکےدرمیان مسلتےجا رہےتھی। پھر مجھےبہت درد ھو رہا تھا , لیکن میں کچھ نہیںکر پا رہی تھی اور وہ نشا بھی ایسا تھا کہ میرےپورےبدن میں ئیکدم گرمی چھا مندرجہ ذیل اور مجھےاُنکا بدن بھی گیلا محسوس ھوتا جا رہا تھا , جیسےکہ وہ پسینےمیں بھیگےہوئے ہے। وہ مجھےھر جگہ چومتےچاٹتےجا رہےتھےاور میری چوت میں زور سےلنڈ اندر باہر کرتےجا رہےتھےاور اُنہوں نے ایسا لگ بھگ 15 منٹ تک کیا ھوگا। پھر مجھےمحسوس ہوا کہ میں دوبارہ جھڑنےوالی ھوںاور میںنے آنکھےبند کی اور بدن ڈھیلا کیا تو میں بول پڑی آاُواُواوہہہہہ ماںآئیئیئیئیئیئ میں پانی چھوڑ رہی ھوںاور سوامیجی نےبھی اپنا بدن ڈھیلا کیا تو میں سمجھ گئی کہ وہ بھی جھڑنےوالےہے। پھر اَچانک مجھےمیرےپیٹ کےاندر گرم پانی بھرنےجیسا محسوس ہوا اور میں سمجھ مندرجہ ذیل کہ وہ میرےاندر ھی جھڑ گئے ہے اور جھڑنےکےبعد وہ میرےاُوپر ھی کچھ دیر لیٹےرہی। پھر وہ میرےاُوپر سےاُٹھےاور باتھروم میں چلےگئے اور مجھےاندر سےپانی چلنےکی آواز آ رہی تھی। پھر تھوڑی دیر بعد سوامی جی نہاکر باتھروم سےباہر نکلےاور مجھےدلیا ھی چھوڑکر وہ خود کپڑےڈال کر باہر چلےگئے اور میں اندر ننگی لیٹی ہوئی تھی اور مجھےپتہ ھی نہیںچلا کہ کب میری آنکھ لگ گئی اور جب مجھےھوش آیا تو بھی میرا سر گھوم رہا تھا , لیکن اب میں اپنے ھاتھ پیر گھما پا رہی تھی , میرےپورےجسم میں درد ھو رہا تھا اور جسم اَکڑ گیا تھا। دل کر رہا تھا کہ کوئی مجھےمالش کر دتا , لیکن وہاںایسا کون ملتا ؟ میں اپنی حالت پر رو رہی تھی اور مجھیاتنا بھی ھوش نہیںتھا کہ میں اُس وقت تک ننگی ھی تھی। پھر میںنے اپنی چوت کو سہلایا تو درد سےراہت ملی। چوت کےھونٹھ پھول گئے تھےاور درد بھی تھا اور چوت کےاُوپر سوامیجی کا ویرےلگا ہوا تھا , جو اب بہت حد تک سوکھ گیا تھا। سوامیجی کےموٹےلنڈ نےمیری چوت کا بھرتا بنا دیا تھا اور میں اپنی چوت کو مسلنےلگی اور مجھےکچھ آرام سا ملا میں اور چوت سہلانےلگی। پھر میںنے ایک اُنگلی کو چوت کےچھید میں گھسا دیا , چوت سےسوامیجی کا ویرےبہ رہا تھا اور میری اُنگلی اندر تک چلی مندرجہذیل। پھر مجھیاتنا مزا آنےلگا کہ میں اُنگلی سےچوت کی چدائی کرنےلگی اور میری آکھوںکےسامنےسوامیجی کی چدائی گھومنےلگی اور میں پوری طرح مگن ھوکر یون میں اُنگلی کر رہی تھی , تبھی ھلکی سی آواز ہوئی اور میں ئیکدم چؤنک سی مندرجہ ذیل , میرا پانی نکلنےوالا تھا اور میںنے چوت کو سہلانا جاری رکھا اور آنکھ کھولا تو کیا دکھتی ھوں؟ کہ سوامیجی کا ایک ششےدرواجےپر کھڑا مجھےدکھا رہا تھا اور اُنگلی سےچوت کو سہلانےاور چودنےسےمجھےبہت مزا آنےلگا تھا اور جس سے میری آواز نکل گئی اور سوامیجی کا وہ ششےپاس کےکمرےسےاُٹھکر میرےکمرےمیں آ گیا। پھر وہ مجھےننگی حالت میں دیکھ کر گھبرا گیا , لیکن جب اُسکی نظر میرےننگےپیروں , جانگھو کی طرف گئی تو وہ دکھتا ھی رہ گیا اور پھر میری چمکتی ہوئی چوت اُسےاپنی اور کھینچ رہی تھی , لیکن میں بھی بنا رکےاُنگلی تیجی سےاپنی چوت میں اندر باہر کرتی رہی اور وہ دن میرےلئے بہت خاص تھا , کیونکہ آج پہلی بار مجھےکسی پرائی مرد نےچودا تھا اور اب پہلی بار ایک پرایا مرد مجھےاپنی اُنگلی سےچوت چودتےہوئے ننگی دیکھ رہا تھا اور اب مجھےبھی مزا آنےلگا تھا। پھر میںنے اپنے پیروںکو اور پھیلا دیا اور اُسےاپنی چوت کےزیارت کراتی رہی اور کچھ دیر بعد وہ بولا کہ آپ سوامیجی کی پیارا بھکت ہے اور آپکو ایسا نہیںکرنا چائیے , باہر سوامیجی آپکی انتظار کر رہےہے। پھر میںنے کہا کہ سوامیجی کےپیارا بھکت آپکو حکم دتی ہے کہ مجھےکچھ وقت دے , آپ وہاںپر کیوںکھڑےھو ؟ آاو اور میرےساتھ یہاںبیٹھکر دکھو। پھر وہ میرےقریب آ گیا اور دھیان سےمیری چوت کو دیکھنے لگا اور اُسی وقت میں زور سےچللائی , اُہہہہ اُوئیئیئیئیئیئی مانآآآ میں گئی اور میں جسم کو ڈھیلا کرکےجھڑ مندرجہذیل। پھر یہ نجارا دیکھ کر وہ ششےجسکا نام خصوصی تھا , اُسکی آنکھےپھٹی کی پھٹی رہ مندرجہ ذیل اور وہ اپنا ھاتھ اپنے لنڈ پر رگڑنےلگا। پھر میںنے اُسکی دھوتی کی طرف دکھا تو اُسکا لنڈ دھوتی سےباہر جھانک رہا تھا। میں اُسکا کھڑا ہوا لنڈ دیکھ کر اور گرم ھونےلگی اور خصوصی کےساتھ بیڈ پر بیٹھ مندرجہ ذیل اور مجھےاُسکا لنڈ پکڑنےکا دل کرنےلگا , اُسکی اور میری سانسےتیز چلنےلگی اور جب کہ میں آج دو بار جھڑ چکی تھی। پھر میںنے اپنی آنکھےبند کی اور اپنا چہرا خصوصی کی طرف بڑہایا , جس سے اُسےمیرےمن کی بات پتہ چلی। پھر اُسنےمیرااشارا سمجھا اور اپنے ھونٹھ میرےھونٹھ پر رکھ دئی اور ھم دونوںایک دوسرےکےھونٹھ چومنےاور چوسنےلگےاور اُسنےاپنی جیبھ کو میرےمہںمیں گھسا دیا اور میں مجےسےاُسےچوسنےلگی اور میرےشوہر اَرن نےکبھی مجھسےایسی کس نہیںکیا تھا। پھر اُسکا ھاتھ میرےبوبس پر پہنچ گیا اور میں ئیکدم سکون ھوکر اُسکےاگلے قدم کی انتظار کرنےلگی اور اُسکی جیبھ چوستی رہی। پھر کچھ دیر کےبعد خصوصی نےمیرےبوبس کو مسلنا شروع کر دیا , میرےنپپل ئیکدم کڑک ھو گئے اور تن گیہ। پھر خصوصی نےاپنا مہںمیرےھونٹھ سےھٹایا اور میرےنپپل کو چوسنےلگا اور وہ پانچ منٹ تک میرےنپپل کو چوستا رہا , کبھی ایک نپپل تو کبھی دوسرا نپپل। پھر میںنے اُسکا سر پکڑا ہوا تھا اور دلیا محسوس کر رہی تھی , جیسا کہ ایک ماںاپنے بچےکو دودھ پلاتےوقت محسوس کرتی ہے اور اُسکیان ھرکتو سےمیں اپنے جسم میں اُٹھتا ہوا درد بھول سی مندرجہ ذیل اور اُسکی آگوش میں کھو مندرجہذیل। تبھی خصوصی نےاپنے مہںکو میرےبوبس سےالگ کیا اور میں اُسکی طرف پیاسی نگاہوںسےدیکھنے لگی। پھر اُسکےبعد وہ میرےسامنےکھڑا ھو گیا اور اُسنےاپنی دھوتی کو کھولکر الگ کر دیا , وہ اب میرےسامنےننگا کھڑا تھا اور اُسکا پھڑپھڑاتا ہوا لنڈ میری آنکھو کےسامنےھچکولےکھا رہا تھا। پھر میں ایک ٹک اُسکےموٹےلنڈ کو دکھتی رہی اور میرا دل کیا کہ اُسےمہںمیں مسئلہ چوس لون। پھر اُسنےاپنے لنڈ کو میرےمہںکےسامنےکرکےکہا کہاسکو چوسو , لےلو اسےاپنے مہںمیں اور چھو لو اسے , بہت مزا آئیگا। دوستوںپہلےتو مجھےبہت عجیب سا لگا کہاتنی گندی چیز کو میں مہںمیں کیسےلوں؟ تو میںنے اپنا مہںسکوڑکر کہا کہ لیکن یہ تو گندا ھوتا ہے , میں اسےمہںمیں نہیںلےسکتی। پھر خصوصی بولا کہ تماسکو ایک بار مہںمیں لو تو ایسا مزا آئیگا کہ تم لنڈ کو مہںسےنکالنےکو تیار ھی نہیںرہوگی اور دکھو یہ کیسےپھنفنا رہا ہے। پھر خصوصی نےاپنے لنڈ کو میرےمہںسےلگا دیا اور میں اُسکو مہںمیں مسئلہ چوسنےلگی , شاید سوامیجی نےجو دواء پلائی تھی , اُسکا اثر ابھی تک باقی تھا। خصوصی کو بہت مزا آ رہا تھا اور اُسکےمہںسےآواجیںنکلنےلگی , اُہہہہ اور زور سےھاںاور زور سےاور میری چوت سےبھی پانی نکل رہا تھا , یہ سوچ سوچکر کہ میں پہلی بار کسی کا لنڈ چوس رہی تھی اور وہ بھی ایک پرائی مرد کا। پھر خصوصی نےمیرا سر پکڑ لیا اور دھککےمارنےلگا اور خصوصی میرےمہںمیں اپنے لنڈ کو اندر باہر کرنےلگا اور تین منٹ کےبعد مجھےاُسکےلنڈ میں عجیب سی سہرن محسوس ھونےلگی اور میں سمجھ مندرجہ ذیل کہ اب وہ پانی چھوڑیگا اور میں اپنے مہںسےاُسکا لنڈ ھٹانےلگی , لیکن خصوصی نےمجھےایسا کرنےنہیںدیا اور اُسنےمیرا سر دونوںھاتھوںسےپکڑ رکھا تھا , اُسکا لنڈ میرےمہںمیں ھی رہا اور وہ جھڑنےلگا। میں اُسکےلنڈ کا ویرےپینا نہیںچاہتی تھی , لیکن تب تک دیر ھو چکی تھی اور اُسنےمیرےمہںمیں ویرےکا پھووارا زور سےچھوڑا اور اُسکےلنڈ سےپانی نکلکر میرےمہںمیں بھرنےلگا اور اُسکےویرےکا سواد اُتنا برا نہیںتھا। پھر میںنے لنڈ پر ھونٹھو کو دبا لیا اور اُسکا سارا پانی میرےمہںمیں چلا گیا اور میں پی مندرجہذیل। اُسکےلنڈ کا پانی پینےکےبعد میں دوبارہ سےاُسکےلنڈ کو چوسنےلگی , کیونکہ میرا من نہیںبھرا تھا। ھےبھگوان میں ایک ھی دن میں ستی ساوتری عورت سےئیکدم ھلکٹ ھسینا بن مندرجہ ذیل تھی , پتہ نہیںسوامیجی نےدودھ میں ملاکر مجھےکیا پلایا تھا। پھر کچھ دیر بعد خصوصی نےکہا کہ اب تم لیٹ جاؤ , میں تمہاری چوت چوسونگا , اتنی مست چوت بہت کم لوگوںکو نسیب ھوتی ہے। پھر میں پلنگ پر لیٹ گئی اور خصوصی نےمیرےپیروںکو پھیلایا , وہ منترمگدھ سا میری چوت کو دیکھ رہا تھا , میری صاف ستھری اور چکنی چوت جو سوامیجی کی چدائی کےبعد بھی ھونٹھ ھلا رہی تھی। پھر خصوصی نےاپنا مہںمیری چوت پر رکھ دیا اور چوت کےھونٹھ چومنےلگا। اُسنےاپنی جیبھ نکالی اور اپنی جیبھ سےمیری چوت کو چاٹنےلگا اور اُسکی گرم جیبھ میری چوت کےدانےکو چھو رہی تھی। پھر وہ بار بار اپنی جیبھ سےمیری چوت کےدانےکو سہلاتا اور چوستا। میں ھر بار دگنےجوش سےاُسکےسر کو اپنی چوت پر دھکیلتی اور میں بھی اس سے بولنےلگی , اُواُواُواُوہہ تم بہت مجیدار ھو। اس چوت نیاتنا مزا پہلےکبھی نہیںلیا , اَمممئیئیئیئیئیئی اور چوسو میرےراجا , زور سےچوسو , آج میری چوت کو زور سےچاٹو , بعد میں پتہ نہیںپھر موقع ملےنا ملے , آہہہہہ یار تم بڑا آدمی ھو اُواُوہہاُواوہ ھاںبہت مزا آ رہا ہے اور بہت اچھا لگ رہا ہے یار , تم تو بہت گرم ھو। پھر میری ایسے باتیںسنکر وہ اور زور زور سےمیری چوت چوسنےلگا اور جیبھ سےچوت چودنےلگا। پھر میںاتنی مستی سےاپنی چوت چسوا رہی تھی اور میں بھول مندرجہ ذیل کہ میں ایک شادیشدا عورت ھوںاور وہ ایک پرایا مرد ہے اور تھوڑی ھی دیر میں وہ وقت آ گیا اور میری چوت میں چھٹپٹاہٹ ھونےلگی। پھر میںنے زور زور سےسانس لینےلگی اور میری چوت نےپانی چھوڑ دیا اور میری چوت سےپانی نکلنےلگا। میری چوت کےرس کو خصوصی اپنی جیبھ سےچاٹنےاور چوسنےلگا , اُسکی اس ھرکت سےمیں تو جوش میں پاگل ھو مندرجہذیل। پھر میںنے اُسکےبالوںکو زور سےپکڑ لیا اور کھینچنےلگی , اُسےدرد بھی ہوا ھوگا। اُسنےکچھ نہیںکہا اور میرا عام رس چوستا رہا اور قریب پانچ منٹ کےبعد خصوصی نےمجھےنیچےلیٹا دیا اور خود میرےاُوپر آ گیا। اُسنےمیری ٹانگوںکو اپنے کندھو پر رکھا اور لنڈ چوت کےمہںپر رکھ دیا। پھر اپنے لنڈ کو چوت کےچھید پر سیٹ کرنےکےبعد اندر کی طرف دھکا دیا। میری چوت کا چھید اُسکےموٹےلنڈ کو اندر نہیںلےپایا , کیونکہ میری چوت کا چھید پوری طرح سےپھیل گیا تو میں درد سےچیکھنےلگی , اُواُوئیئیئیئیئیئیئی اُہہہہ ماںمیں مر گئیئیئیئیئیئی پلیج باہر نکالو اپنے لنڈ کو। پھر اُسنےمیرےپیر کندھےسےاُتارےاور پھیلاکر اپنے دونوںسائیڈ پر کر دئی اور پھر اپنے لنڈ کو میری چوت میں ڈال دیا। اُسنےاپنے لنڈ کو میری چوت میں ڈالا تو لگا کہ جیسےکسی نےگرم لوہےکا سریا میری چھوٹی سی چوت میں گھسیڑ دیا ھو। اب تک میری چوت بلکل خوش ھو چکی تھی اور ایسا لگ رہا تھا کہ جیسےکسی کنواری لڑکی کی چوت ھو اور مجھےدرد بھی ھونےلگا , لیکن مجھےمزا بھی لینا تھا। پھر تھوڑی دیر بعد مجھکو مزا آنےلگا , میں بھی خصوصی کو کہنےلگی اور میں بولی کہ چودو مجھےجلدی کرو اوہہہہ تم بہت جالم ھو , لیکن بہت اچھے بھی اَہہہ تھوڑا آرام سےکرو اور پلیج اپنے لنڈ پر تیل لگا لو , ایسی سوکھا لنڈ اندر جانےسےتکلیف ھوتی ہے। تمنےکہاںسےسیکھا یہ سب ؟ مجھےبڑا مزا آ رہا ہے اور مجھےایسا مزا کبھی بھی نہیںآیا , تم ئیکدم اَنبھوی ھو چودنےمیں , اَہہ آرام سےکیا آج ھی میری چوت پھاڑنی ہے ؟ اور کیا ایک ھی دن میں سب بربعد کر دوگے؟ مجھےگھر بھی جانا ہے اور میرےشوہر نےمجھےایسی دیکھ لیا تو گجب ھو جائیگا। میں اُنہےکیا جواب دونگی سالے؟ میں تمہارےسوامیجی کی پیارا بھکت ھوںیار , کچھ تو رہم کرو دھیرےدھیرےچودو مجھےآاَہہ پلیج میں سچ کہ رہی ھوں , مجھےدرد ھو رہا ہے پلیج آرام سےکرو نا , لیکن خصوصی نےاپنی سپیڈ کم نہیںکی , کیونکہ اب میری چوت ایک کنواری لڑکی کی چوت بن چکی تھی اور اُسےچدائی میں بہت مزا آ رہا تھا। پھر وہ دوگنی سپیڈ سےمجھےچودتا جا رہا تھا اور میں اس سے مننتےکر رہی تھی , آاَہہ یار آج میری چوت بہت ٹائیٹ ہے اور زور سےپورا اندر ڈالو اُوئیئیئیئیئیئی کرو اور زور سےاور خصوصی رک رککر دھککےمارنےلگا। 15 منٹ کےبعد میں جھڑ مندرجہ ذیل , لیکن خصوصی کا لنڈ ابھی بھی کھڑا ھی تھا اور وہ پورےزور سےھلاتا رہا تو دس منٹ کےبعد میری چوت نےپھر سےپانی چھوڑ دیا اور ساتھ ھی خصوصی کےلنڈ سےبھی پانی نکلنےلگا। اُسنےاپنے جسم کو کڑک کیا اور ویرےکا پھووارا چھوڑ دیا। پھر میںنے اُسےزور سےجکڑ لیا اور بولی کہ اوہہہ ماناتنا گرم ویری। اب تو رک جاؤ , میری جان نکل چکی ہے। پھر خصوصی قریب دو منٹ تک میری چوت میں اپنا ویرےچھوڑتا رہا , وہ تھک گیا اور میرےاُوپر ھی لیٹ گیا اور جب تھوڑی دیر بعد ھم اُٹھےتو میںنے دکھا کہ میری جانگھو پر اور پلنگ پر خون لگا ہوا تھا اور خصوصی نےمیری چوت پھاڑ دی تھی। اپنی ایسے حالت دیکھ کر میں ئیکدم گھبرا مندرجہ ذیل تو خصوصی نےکہا کہ کوئی بات نہیں , کبھی کبھی ایسا ھوتا ہے। چلو اب میں چلتا ھوں , سوامیجی بلا رہےہے , تم بھی تیار ھوکر باہر آ جانا , لیکن اسےپہلےاچھے سےدھو لینا , تاکہ خون بہنا بند ھو جائیگا اور وہ چلا گیا , لیکن میںاتنا تھک گئی تھی کہ میں دوبارہ سو مندرجہذیل। میں دو گھنٹےکےبعد اُٹھی اور واشروم گئی تو مجھسےچلا بھی نہیںجا رہا تھا। پھر بھی میںنے اپنے آپکو سنبھالا , تاکہ کسی کو کوئی شک نا ھو جائی , میں اُٹھی اور باتھروم میں مندرجہذیل। پھر میںنے محسوس کیا کہ میری چوت کا ھونٹھ پھول گیا تھا اور مجھسےٹھیک سےچلا نہیںجا رہا تھا اور میں کسی طرح سےدیوار کا سہارا مسئلہ باتھروم تک پہنچی اور شاور چالو کرکےنہانےلگی تو میری چوت سےابھی تک ویرےنکل رہا تھا , لیکن مجھےنہیںپتہ کہ وہ سوامیجی کا تھا یا خصوصی کا। پچھلی باتوںکو یاد کرکےمیری آنکھو سےآنسو بہنےلگےاور میںنے چوت کو اندر اُنگلی ڈال ڈال کر اچھے سےصاف کیا اور خود کو صاف کرنےکےبعد میںنے اپنے کپڑےپہنےاور باہر آ مندرجہ ذیل تو باہر سوامیجی اپنے سبھی ششیو کےساتھ بیٹھےہوئے تھےاور جیسےھی میں باہر آئی تو سوامیجی میرےپاس آئی اور سوامیجی مجھسےبڑےپیار سےبولےکہ پوجا کامیاب ہوئی , ابھی کےلئے الزام دور ھو گیا ہے اور تم فکر مت کرو , تیرا کام ھو گیا ہے। بیٹی اگر کام ھو جائی تو ایک کلو لڈڈو ھنمان جی کو چڑانےجرور آنا اور سوامیجی نےبہت نمرتا سےمیرےآنسو صاف کئی اور پرساد کہکر اُنہوں نے میرےھاتھوںمیں کچھ مٹھائیاںدی اور کہا کہ وہ میں خود بھی کھااُوںاور اپنے گھر میں سبکو کھلااُون। میں 5 بجے وہاںسےنکلکر واپس اپنے گھر آ مندرجہذیل। پھر میں پورےٹائیم من میں گلان ھو رہی تھی اور میں سوچ نہیںپا رہی تھی کہ کیا یہ بات میں اپنے شوہر کو بتااُوںکہ نہین। میں سوچنےلگی کہ اب سےمیں اُس سوامی کےپاس نہیںجااُنگی , شام کو جب میرےشوہر آئی تو وہ بہت خوش لگ رہےتھی। پھر اُنہوں نے کہا کہ اُنہےکسی بڑی کمپنی میں مینیجر کی نوکری مل گئی ہے اور اُنکی پگار 50 , 000/ – مہینےہے اور یہ بات سنکر میں حیران رہ مندرجہذیل। پھر میںنے سوچا کہ یہ تو چمتکار ھو گیا , اب مجھےسوامیجی پر یقین ھو گیا। اگلے دن سےمیرےشوہر ھر روز نوکری پر جانےلگےتھےاور میں سوامیجی کےپاس مندرجہ ذیل اور اُنہےخوش کھبری سنائی। پھر اُنہوں نے کہا کہ یہ میں جانتا ھی تھا کہ ایک بار کالدوش ھٹ گیا تو سب ٹھیک ھو ھی جائیگا , لیکن تم چاہتی ھو کہ یہ ایسا ھی چلتا رہےتو تم اکثر آتی رہا کرو , میں من سےتمہارےلئے پوجن کرتا رہونگا। میں پھر سےسوامیجی کی باتوںمیں آ مندرجہ ذیل اور اب سوامیجی ہفتے میں 4 بار مجھےپوجا کےبہانےبلاتےاور اُسی طرح کےڈرامہ سےمجھےچودتےرہتےہے اور گھر میں سب ٹھیک ھوتا جا رہا تھا , اسلئے مجھےاب پھرک بھی نہیںپڑتا। اَرن میرےشوہر اپنی نیی نوکری میںاتنےبیکار ھو گئے کہ مجھ پر زیادہ دھیان بھی نہیںدتےاور جب سوامیجی کسی کام میں بیکار ھوتےہے تو کبھی کبھی مجھےخصوصی بھی چودتا ہے , لیکن اب میری چوت کا بھوسڑا بن چکا ہے , لیکن پھر بھی سوامیجی کو میری چوت بہت پسند آتی ہے ।। دھنیواد …[/size:1mx3diz8]

Share
Posted in Uncategorized
Article By :

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *